پیرمستوار قلندر کی حضرت نور المبینؒ کےمزارِ اقدس پر حاضری

پیرمستوار قلندر کی حضرت نور المبینؒ کےمزارِ اقدس پر حاضری کیپ ٹاون میں ٹیبل مونٹین کی پہاڑی پر حضرت نور المبین ؒ کا مزارِ اقدس ہے جب پیر مستوار قلندر وہاں پہنچے تو دیکھا کہ مزار شریف کے اطراف کی ہر شے جلی ہوی تھی۔ تھوری ہی دیر میں ایک شخص آیا جو کہ مزار شریف کا خادم تھا اور اس نے بتایا کہ پہاڑی پر 4 دن سے آگ لگی ہوئی تھی جس نے پہاڑی پر موجود ہر چیز کو جلا کے راکھ کر دیا، ماسواے مزار شریف کے ،اس آگ کی خبر ساوتھ افریقہ کے تمام میڈیا پر بھی نشر ہوئی ۔ جس وقت پہاڑی پر آگ لگی تو خادمِ دربار نے اپنے تمام خاندان کو پہاڑی سے نیچے چھوڑ دیا ۔ اور خود مزار کی حفاظت کے لئے واپس چلا آیا۔عبد الرحمن کی مزار اقدس کے ساتھ محبت اور وفاداری کا رشتہ اسی بات سے عیاں ہے کہ پہاڑی پر آگ کے تیزی سے پھیلنے کا باوجود اس نے اپنی فرائض سے روگردانی نہ کی بلکہ مزار پاک کی حفاظت کو اپنی جان سے بھی زیادہ مقدم جانا، اور محبت اور وفا داری کا عملی ثبوت دیا۔ 4 دن تک عبدالرحمان اکیلا مزار شریف کی حفاظت کرتا رہا، پانچواں دن جب پیر مستوار قلندر حاضری کے لئے تشریف لائے تو عبدالرحمان پیر صاحب کو دیکھ کر ڈوڑا چلا آیا جناب کی قدم پوشی کی، پیر مستوار قلندر نے عبدالرحمان کو گلے سے لگایا اور اس کی صاحبِ مزار کی ساتھ محبت اور وفاداری کو دیکھ کر بہت خوش ہوئے اور اس سے دعاوں سے نوازا۔ عبد الرحمان جب امتحان میں سر خرو ہوا تو انعام کی صورت میں اسے پیر مستوار قلندر جیسے عظیم راہبر، مرشد کامل کی صحبت و سنگت میسر ہوئی ۔ عبد الرحمان کیپ ٹاون میں روزنہ پیر صاحب کی صحبت سے مستفیذ ہوتا ، اور اپنے قلوب و اذہان کو صحبتِ مستوار سے معطر کر تا.

Add your comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *